شہید ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد 1048 ہوگئی ہے۔ ٹی وی شیعہ

تحریک مزاحمت اسلامی حماس نے مطالبات پورے کئے بغیر قبول کرنے سے انکار کر دیا ہے۔ صیہونی جارحیت کے نتیجے میں شہید ہونیوالے فلسطینیوں کی تعداد 1050 ہوگئی ہے

ٹی وی شیعہ[ریسرچ رپورٹ]عید الاضحی کی آمد آمد ہے اور اس وقت صیہونی حکومت نے 24 گھنٹے کے لیے حملے روکنے کا اعلان کیا ہے، جسے تحریک مزاحمت اسلامی حماس نے مطالبات پورے کئے بغیر قبول کرنے سے انکار کر دیا ہے۔ صیہونی جارحیت کے نتیجے میں شہید ہونیوالے فلسطینیوں کی تعداد 1050 ہوگئی ہے جبکہ 42 فوجیوں سمیت مرنے والے صیہونیوں کی تعداد 45 ہوگئی ہے۔ سرحدی علاقے بیت حنون پر بمباری کے نتیجے میں پوری کی پوری بستی کھنڈر میں تبدیل ہوچکی ہے۔ صیہونی حکومت اور حماس کے درمیان 12 گھنٹوں کی جنگ بندی کے دوران جب جنوبی غزہ کے علاقے خان یونس کے رہائشی بچا کھچا سامان اور پیاروں کی تلاش میں گھروں کو لوٹے تو ملبے کے ڈھیر، اجڑے مکانات اور وحشت ناک مناظر نے ان کا استقبال کیا۔ صیہونی درندگی کے باعث ہنستے بستے علاقے قبرستان میں بدل گئے ہیں۔ سرکاری حکام کے مطابق بمباری کے نتیجے میں 20 ہزار سے زائد عمارات تباہ ہوچکی ہیں، علاقے میں موجود تمام درخت برباد اور مویشی بھی ہلاک ہوچکے ہیں اور ڈیڑھ لاکھ سے زائد لوگ در بدر ہوئے ہیں۔ غزہ کی وزارتِ صحت کا کہنا ہے کہ جنگ بندی کے دوران عمارتوں کے ملبے سے147 لاشیں برآمد ہوئی ہیں جبکہ حکام کو خدشہ ہے کہ ابھی مزید لاشیں ملبے تلے موجود ہیں۔ صیہونی حکومت نے پہلے 4 اور پھر 24 گھنٹوں کے لیے حملے روکنے کا اعلان کیا، حماس نے اس پیشکش کو مسترد کر دیا۔

دیگر ذرائع کے مطابق صیہونی حکومت نے اقوامِ متحدہ کی جانب سے جنگ بندی میں مزید 24 گھنٹوں کی توسیع منظور کر لی ہے۔ جب کہ عمارات کے ملبے سے مزید لاشیں ملنے کے بعد شہید ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد 1048 ہوگئی ہے۔ عالمی میڈیا کے مطابق ایک سینیئر صیہونی اہلکار نے اس اعلان کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ اقوامِ متحدہ کی درخواست پر مزید 24 گھنٹوں کے لیے کابینہ نے جنگ بندی کی تجویز منظور کر لی ہے، تاہم جنگ بندی کے دوران فوج کو کارروائی کے لیے تیار رہنے کا حکم دیا ہے، اگر اس جنگ بندی کی خلاف ورزی کی جاتی ہے۔ یاد رہے کہ ہفتے کو صیہونی حکومت اور حماس کے درمیان غزہ میں انسانی ہمدری کی بنیاد پر 12 گھنٹوں کی جنگ بندی ہوئی تھی۔ غزہ میں صیہونی جارحیت کے نتیجے میں اب تک 1000 سے زیادہ فلسطینی شہید اور 39 اسرائیلی ہلاک ہوچکے ہیں۔ شہید فلسطینیوں میں زیادہ تر عام شہری ہیں۔ جنگ بندی کے اوقات میں غزہ کی عمارتوں اور گھروں سے مزید 140 جسد خاکی نکالے گئے۔